اگر پاکستان کو حقیقی ترقی دینی ہے تویہ سفر بلوچستان سے ہی شروع کرنا ہوگا،صوبائی وزیر زمرک خان اچکزئی

اگر پاکستان کو حقیقی ترقی دینی ہے تویہ سفر بلوچستان سے ہی شروع کرنا ہوگا،صوبائی وزیر زمرک خان اچکزئی

کوئٹہ (زیبائے پاکستان آئی این پی) صوبائی وزیر زراعت انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا ہے کہ وفاق نے ہمیشہ بلوچستان کو ترقی کے سفر میں نظرانداز رکھا، ملک کے دیگر صوبوں میں میٹرو ٹرین، گرین بس اور موٹروے جیسے بڑے منصوبے بنائے گئے لیکن بلوچستان کو پینے کی پانی جیسے بنیادی ضروریات کے منصوبوں پر خاطرخواہ توجہ نہیں دی گئی جس سے صوبے میں پسماندگی، غربت اور بے چینی میں اضافہ ہوا، اگر پاکستان کو حقیقی ترقی دینی ہے تو ترقی کا سفر بلوچستان سے ہی شروع کرنا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کے روز محکمہ منصوبہ بندی و ترقیات کے زیر اہتمام منعقدہ مشاورتی اجلاس سے اظہار خیال کرتے ہوئے کیا جس میں منسٹری آف پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ ریفارمز کی بارہویں پانچ سالہ منصوبہ پیش کیا گیا۔اجلاس میں ارکان اسمبلی نوابزادہ گہرام بگٹی، لالا عبدالرشید بلوچ، ایڈیشنل چیف سیکرٹری منصوبہ بندی و ترقیات عبدالرحمن بزدار اور مختلف محکموں کے سیکرٹریز بھی موجود تھے۔ جبکہ منسٹری آف پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ کے جوائنٹ چیف ایکونومسٹ رائے ناصر اور چیف پلاننگ کوآرڈینیٹر ڈاکٹر حسن نے وفاقی پلاننگ کمیشن کی نمائندگی کی۔ صوبائی وزیر انجینئر زمرک خان اچکزئی نے کہا کہ وفاق کو چاہئے کہ بلوچستان میں پانی، صحت، تعلیم، زراعت اور معدنیات کے شعبوں کی ترقی میں صوبے پر خصوصی توجہ دینے کے ساتھ ساتھ اسکی بھرپور مالی معاونت بھی کرے تاکہ صوبے سے غربت کا خاتمہ ہو اورصوبے میں خوشحالی آسکے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان کو سی پیک کے منصوبوں میں بھی نظرانداز رکھا گیا جبکہ صوبے کی یہ حالت ہے کہ ستر سالوں میں یہاں ایک کلومیٹر دو رویہ سڑک بھی نہ بن سکا جس کی وجہ سے مختلف قومی شاہرائوں پر روزانہ کی بنیادپر حادثات ہو رہے ہیں۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ بلوچستان میں ڈیموں کی اشد ضرورت ہے لیکن فنڈز کی عدم دستیابی کی وجہ سے ڈیموں کے منصوبے تعطل کا شکار ہے، انہوں نے کہا کہ وفاقی پلاننگ کمیشن کا وفد بلوچستان کے ساتھ بیٹھ کر صوبے میں جاری وفاقی منصبوبوں کی بروقت تکمیل اور نئے منصوبوں کا تعین کریں اور وفاق بلوچستان کواس کا جائز حق دینے میں دیر نہ کرے، صوبائی وزیر نے کہا کہ بلوچستان کی ترقی کے بغیر پاکستان کی ترقی کا سفر ادھورہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں