فوجی عدالتوں سے سزا پانے والے مجرمان کی بریت کے خلاف وزارت دفاع کی اپیل ، مقدمہ تین ممبر بینچ کے سامنے مقرر کر نے کیلئے فائل چیف جسٹس کو بھجوادی

0

 اسلام آباد (این این آئی)سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں سے سزا پانے والے 71  ملزمان کی بریت کے خلاف وزارت دفاع کی  اپیل پر سماعت کے دور ان مقدمہ تین ممبر بینچ کے سامنے مقرر کرنے کیلئے فائل چیف جسٹس کو بھجوادی۔ پیر کو سپریم کورٹ میں فوجی عدالتوں سے سزا پانے والے 71  ملزمان کی بریت کے خلاف وزارت دفاع کی  اپیل پر سماعت جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نے کی۔ عدالت نے مقدمہ تین ممبر بینچ کے سامنے مقرر کرنے کیلئے فائل چیف جسٹس کو بھجوادی۔ وکیل ملزمان نے کہاکہ میری معلومات کے مطابق کبھی سپریم کورٹ نے بریت کے حکم کو معطل نہیں ،عدالتی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی ملزم کی بریت کا فیصلہ معطل کیا گیا ۔وکیل ملزمان  نے کہاکہ ملزمان بری ہونے کے باوجود جیل میں ہیں ،بغیر سنے سپریم کورٹ بھی ایسا حکم نہیں دی سکتی تھی ۔وکیل ملزمان  نے کہاکہ وزارت دفاع کی اپیل تو قابل سماعت بھی نہ تھی ۔ جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ بدقسمتی سے آ ج تین ممبر بینچ نہیں،دو ممبر بینچ اس کیس کو نہیں سن سکتا۔وکیل لائق سواتی نے کہاکہ ڈیڑھ سال سے ملزمان جیل میں ہیں۔ وکیل لائق سواتی نے کہاکہ صرف فوجی مقدمہ ہونے کے باعث ملزمان کے ساتھ ایسا ہو رہا ہے۔ وکیل لائق سواتی نے کہاکہ بدقسمتی ہے کہ فوج جو بھی کرے انکے خلاف حکم جاری نہیں ہوتا۔ وکیل لائق سواتی نے کہاکہ ایسا  رویہ دنیا میں کہیں نہیں ہے۔ جسٹس مشیر عالم نے کہاکہ آ پ تقریر باہر کیا کریں۔ وکیل لائق سواتی نے کہاکہ عدالت کا سزائیں معطل کرنے کا حکم تقریر سے کم نہیں ۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.