اسرائیل، فلسطینی سرزمین کے انضمام کی باتیں بند کرے، متحدہ عرب امارات

0

ابو ظہبی: متحدہ عرب امارات کے وزیرخارجہ انور قرقاش نے کہا ہے کہ اسرائیل کی جانب سے مغربی کنارے کے انضمام کے لیے یکطرفہ فیصلہ مشرق وسطی کے امن عمل کے لیے خطرناک دھچکا ہوگا۔بین الاقوامی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو کہہ چکے ہیں کہ اسرائیل کے آزاد فلسطین کے علاقوں تک توسیع کے انضمام کے منصوبے پر یکم جولائی سے کابینہ میں بحث شروع ہوگی۔متحدہ عرب امارات کے وزیر خارجہ انور قرقاش نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ ‘فلسطینی سرزمین کے انضمام سے متعلق اسرائیل کی باتیں بند ہونی چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ ‘اسرائیل کا کوئی بھی یکطرفہ قدم امن عمل کے لیے دھچکا ہوگا۔انور قرقاش نے کہا کہ فلسطینیوں کی خود ارادیت کو نظرانداز کرنے، امن و استحکام کی جانب عالمی اور عرب ممالک کے اتفاق رائے کو مسترد کرنے سے شدید نقصان ہوگا۔خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات خلیج میں ایران کے خلاف امریکا کا اہم اتحادی ہے اور ان کا مقف ہے کہ خطے میں ایران کے اثر و رسوخ کو روکنا ضروری ہے۔خلیجی ممالک کا خیال ہے کہ ایران روایتی پالیسی کے تحت فلسیطینیوں کی حمایت کرکے خطے میں اپنا اثر بڑھانا چاہتا ہے جس کے توڑ کے لیے مضبوط اتحاد کی ضرورت ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.