سعودی عرب، لاک ڈائون کے دوران طلاقوں میں 30 فیصد اضافہ

0

ریاض: کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں لاک ڈائون نافذ کیے جانے سے جہاں یورپ اور مغربی ممالک میں طلاقوں اور خواتین پر تشدد میں اضافہ دیکھا گیا۔وہیں سعودی عرب میں بھی طلاقوں کی شرح میں 30 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جب کہ وہاں شادیوں میں بھی 5 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔گلف نیوز نے اپنی رپورٹ میں سعودی عرب کے اخبار اوکاز کی رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا کہ سرکاری اعداد و شمار کے مطابق رواں برس فروری میں ہی سعودی عرب میں طلاقوں کی شرح میں 30 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔سرکاری اعداد و شمار کے مطابق فروری 2020 میں سعودی عرب بھر میں 7 ہزار 482 طلاقیں ہوئیں یا ان کے لیے قانونی کارروائی ہوئی۔اسی طرح صرف فروری کے مہینے میں ہی ملک بھر میں 13000 شادیاں رجسٹرڈ ہوئیں یا سرانجام پائیں جو کہ پچھلے سال فروری کے مہینے سے 5 فیصد زیادہ تھیں۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ وزات انصاف اور دیگر سرکاری اداروں کے سعودی حکام نے فروری کے بعد شادیوں اور طلاقوں کے ماہانہ اعداد و شمار جاری کرنا بند کردیے ہیں، کیوں کہ حکام کو خدشہ ہے کہ لاک ڈائون کے باعث درست اعداد و شمار نہیں ہوں گے۔رپورٹ کے مطابق لاک ڈائون کے دوران نہ صرف عام سعودی جوڑوں میں طلاقیں ہوئیں بلکہ پڑھی لکھی سعودی خواتین نے بھی ماضی کے مقابلے زیادہ تعداد میں خلع کی درخواستیں دائر کیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.