حکومت بلوچستان ڈاکٹروں کی کمی پوری کرنے کیلئے تمام دستیاب سہولتیں بروئے کار لارہی ہے ،گورنر بلوچستان

حکومت بلوچستان ڈاکٹروں کی کمی پوری کرنے کیلئے تمام دستیاب سہولتیں بروئے کار لارہی ہے ،گورنر بلوچستان

کوئٹہد(زیبائے پاکستان آئی این پی)گورنر بلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے کہا ہے کہ صوبے میں میڈیکل کی تعلیم کے فروغ اور متعلقہ اداروں کو استحکام بخشنے پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے ۔ ہماری مشترکہ کاوشوں کی بدولت بولان یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز ترقی کی راہ پر گامزن ہوچکی ہے اور قومی سطح پر بولان یونیورسٹی اپنا نام اور مقام بنانے کے امکانات روشن ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے جمعہ کے روز گورنر ہاؤس کوئٹہ میں بولان یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز سینڈیکٹ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر بولان میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر نقیب اللہ اچکزئی ، رکن صوبائی اسمبلی میر اختر حسین لانگو ، پرنسپل بولان میڈیکل کالج ڈاکٹر شبیر احمد لہڑی اور بولان یونیورسٹی سینڈیکٹ کے ممبران پروفیسر عبدالباقی درانی ، پروفیسر راحیلہ احسان ، پروفیسر اختر ملغانی اور بولان یونیورسٹی کے رجسٹرار شکیل احمد بھی موجود تھے۔ گورنر نے کہا کہ حکومت بلوچستان ڈاکٹروں کی کمی پوری کرنے کیلئے تمام دستیاب سہولتیں بروئے کار لارہی ہے اورصوبے میں نئے قائم ہونے والے میڈیکل کالجوں کو قانونی دائرے میں رہتے ہوئے مضبوط اورمستحکم بنیادیں فراہم کرنے کیلئے اقدامات اٹھارہی ہے تاکہ ان میڈیکل کالجوں میں داخلے کے عمل کو درست اور دیر پا طریقے سے آگے لے جایا جاسکے۔ گورنر نے کہا کہ اس ضمن میں موجودہ حکومت نے خطیر رقم بھی رکھی ہے تاکہ میڈیکل کالجوں میں تمام ضروری سہولتوں کی فراہمی کو احسن طریقے سے پورا کیا جاسکے جو پی ایم ڈی سی ( PMDC) کی گائیڈ لائنز کے مطابق ہوگا۔ گورنر بلوچستان نے وائس چانسلر بولان یونیورسٹی اور ان کی پوری ٹیم کی انتھک کاوشوں کو سراہا اور کہا کہ یونیورسٹی کے معیار وقار کوبلند کرنے اور طلباء وطالبات کو ایک صحت مند تعلیمی ماحول فراہم کرنے پر بھرپور توجہ مرکوز رکھی جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں