ٹرمپ کیخلاف انتظامیہ کی بغاوت کا خدشہ،متعدد اہلکار مظاہرین کے ساتھ ہو گئے

0

واشنگٹن: امریکا میں جاری مظاہروں نے ٹرمپ کیخلاف انتظامیہ کی بغاوت کے خدشات کو جنم دے دیا ہے، پولیس اہلکاروں نے مظاہرین کی سرکوبی کے صدر ٹرمپ کے حکم کے برخلاف احتجاجی مظاہرین سے یکجہتی کا اظہار کیا ہے،پولیس اہلکاروں نے مظاہرین کو گلے لگایا، ان کے لیے دعائیں کیں، ان کے ساتھ سوگ منایا اور سیاہ فام شہری جارج فلوئیڈ کے احترام میں خم ہو کر ان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔ بین الاقوامی میڈیا کے مطابق امریکا کے متعد پولیس اہلکاروں نے مظاہرین کی سرکوبی کے صدر ٹرمپ کے حکم کے برخلاف احتجاجی مظاہرین سے یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔سی این این کی رپورٹ کے مطابق امریکا کے بہت سے پولیس اہلکاروں نے مظاہرین کو گلے لگایا، ان کے لیے دعائیں کیں، ان کے ساتھ سوگ منایا اور سیاہ فام شہری جارج فلوئیڈ کے احترام میں خم ہو کر ان کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔ اس رپورٹ کے مطابق جارجیا ریاست کے مرکزی شہر اٹلانٹا میں پولیس فورس کی ایک پوری صف، احتجاجی مظاہرین کے سامنے گھٹنوں کے بل بیٹھ گئی۔ پیر کے روز امریکی ریاست کلوریڈو کے ڈینور شہر کے پولیس چیف پال پازن بھی احتجاجی مظاہرین کی صف میں شامل ہو گئے تھے اور انھوں نے مظاہرین کے بازوں میں اپنا بازو بھی ملا دیا تھا۔ نیویارک شہر کے پولیس چیف ٹیرینس موناہن نے بھی اس شہر میں ہونے والے ایک احتجاجی جلسے میں احتجاج کرنے والے ایک شخص کو گلے لگا لیا تھا۔یاد رہے کہ گزشتہ پیر کو امریکی ریاست مینے سوٹا کے مینیا پولس شہر میں ایک سفید فام امریکی پولیس افسر کے ہاتھوں ایک سیاہ فام باشندے کے انتہائی سفاکانہ طریقے سے کیے گئے قتل کے بعد پورے امریکا میں نسل پرستی کے خلاف مظاہرے ہو رہے ہیں۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حکم پر سیکورٹی فورسز مظاہرین کی بری طرح سے سرکوبی کر رہی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.