دورہ پاکستان، سری لنکن بورڈ نے اپنے کھلاڑیوںپر دبائو بڑھانا شروع کر دیا

دورہ پاکستان، سری لنکن بورڈ نے اپنے کھلاڑیوںپر دبائو بڑھانا شروع کر دیا

کولمبو(زیبائے پاکستان آئی این پی) سری لنکن بورڈ نے دورہ پاکستان کیلئے اپنے کھلاڑیوں پر دبائو بڑھانا شروع کردیا ہے۔سری لنکا کرکٹ نے کیریبیئن پریمیئر لیگ سمیت مختلف غیرملکی ایونٹس کھیلنے کے خواہاں کچھ پلیئرز کے این او سی روک لیے ہیں، بورڈ کے اہم ذرائع نے تصدیق کی کہ لسیتھ مالنگا، نروشن ڈیکویلا اور تھشارا پریرا سی پی ایل میں سینٹ لوشیا زوکس جبکہ اسورو اڈانا سینٹ کٹس نیوس پیٹریاٹس کی نمائندگی کریں گے۔انھوں نے 4ستمبر سے 12اکتوبر تک جاری رہنے والے ایونٹ کیلئے این او سی مانگا تھا مگر ابھی تک جاری نہیں کیا گیا ہے۔ گذشتہ جمعے کو کرکٹ جنوبی افریقہ نے آل رانڈر اڈانا کو اپنے ٹی 20ایونٹ میں بطور انگلش کرکٹرڈیوڈ ویلی متبادل پرل راکس میں شامل کیا تھا۔سری لنکا کرکٹ بورڈ نے دورہ پاکستان پرخدشات دور کرنے کیلئے 9ستمبر کو 30کے قریب پلیئرز کو طلب کیا ہے۔ انھیں بورڈ کے صدر شمی سلوا اور روشین گوناتھلاکا پی سی بی کی جانب سے مرتب کیے گئے سیکیورٹی پلان پر بریفنگ دیں گے۔یاد رہے کہ کچھ سینئر پلیئرز سیکیورٹی خدشات کے پیش نظر پاکستان کا ٹور نہیں کرنا چاہتے،ان میں لسیتھ مالنگا، انجیلو میتھیوز، ڈیموتھ کرونارتنے، کوشل پریرا، کوشل مینڈس، نروشن ڈیکویلا اور لاہیرو تھریمانے شامل ہیں۔ بریفنگ میں چیف سلیکٹر اشانتھا ڈی میل بھی شریک ہونگے، وہ بعد میں دورئہ پاکستان کیلیے پلیئرز کی دستیابی کا جائزہ لیں گے۔اس میٹنگ میں وزیر کھیل ہیرن فرناڈو شریک نہیں ہوں گے۔ البتہ ان کی بعد میں کھلاڑیوں سے الگ ملاقات ہو گی،انھوں نے پہلے ہی ٹیم کے ہمراہ پاکستان کا سفر کرنے کی پیشکش کردی ہے۔پی سی بی نے پلیئرز کے تحفظات کو سری لنکن بورڈ کا داخلی مسئلہ قرار دے دیا، ڈائریکٹر میڈیا اور کمیونیکیشن سمیع برنی نے کہاکہ کسی بھی ملک کا دورہ کرنے کیلئے ٹیم وہاں کا بورڈ منتخب کرتا ہے،دنیا بھر میں اگر کوئی کھلاڑی کسی بھی ملک میں نہیں جانا چاہتا تو اسے فیصلے کی آزادی ہوتی ہے،بہرحال سری لنکن بورڈ کو ہی اسکواڈ منتخب کرکے بھیجنا ہے، ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی میچز کے انعقاد کیلئے ہماری تیاریاں مکمل ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں