صوبائی حکومت آزادی مارچ میں کسی قسم کی خلل نہیں ڈالے گی ،وزیرداخلہ بلوچستان

صوبائی حکومت آزادی مارچ میں کسی قسم کی خلل نہیں ڈالے گی ،وزیرداخلہ بلوچستان

کو ئٹہ: صوبائی وزیر داخلہ بلوچستان میر ضیاء اللہ لانگو نے کہاہے کہ دھرنا اور احتجاج عوام اور سیاسی جماعتوں کا جمہوری حق ہے ،جمعیت علماء اسلام اپنے اس جمہوری حق کااستعمال کرسکتی ہے ،صوبائی حکومت اس سلسلے میں کسی قسم کی خلل نہیں ڈالے گی ،وی آئی پی ڈیوٹیوں پر تعینات 122اہلکاروں کی خدمات محکمے کے سپرد کردی گئی ہے ،دکی واقعہ سے متعلق رپورٹ طلب کی ہے بلکہ گڈانی لیڈی جیل وارڈن کی قتل سے متعلق بھی نوٹس لے لیاہے ذمہ داروں کے خلاف ایکشن لیاجائے گا۔ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز کوئٹہ میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ میر ضیاء اللہ لانگو کاکہناتھاکہ عوام کی جان ومال کی حفاظت ریاست کی اولین ذمہ داری ہے اس سلسلے میں کسی قسم کی غفلت اور غیر ذمہ داری برداشت نہیں کی جائے گی ،لیویز اور پولیس اہلکاروں کی جانب سے رشوت لینے کی شکایات کے بعد شکایات سیل بنایاجارہاہے جو بھی اہلکار عوام سے رشوت طلب کرے گا اس کے خلاف کارروائی ضرور کی جائیگی تاہم اس سلسلے میں ہمیں عوام کے تعاون کی بھی ضرورت ہوگی ۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ روز وی آئی پی ڈیوٹی پر تعینات122سیکورٹی اہلکاروں کی خدمات واپس اپنے محکموں کے حوالے کردی گئی ہے ،انہوں نے کہاکہ دکی واقعہ سے متعلق رپورٹ طلب کرلی گئی ہے ہم انتظامیہ کے آفیسران اور اہلکاروں کو بتاناچاہتے ہیں کہ وہ اختیارات سے تجاوز نہ کرے انہوں نے کہاکہ ہمیں عوام نے ووٹ دیاہے ہمارا فرض ہے کہ ہم عوام کی خدمت کرے ان کاکہناتھاکہ محکمہ تعلیم کے مختلف کیڈرز میں بھرتیوں سے متعلق شکایات کا وزیراعلیٰ بلوچستان نوٹس لے چکے ہیں بلکہ سی ایم آئی ٹی بھی مکمل طورپر فعال ہیں جو عوام کی شکایات کاازالہ کرے گی ،صوبائی وزیر داخلہ نے گڈانی جیل میں لیڈی وارڈن کے قتل کی مذمت کی اورکہاکہ دوران ڈیوٹی لیڈی جیل وارڈن کو قتل کردیاگیا جس پر ہمیں افسوس ہے بلکہ ہم اس کی اہل خانہ سے بھی تعزیت کااظہار کرتے ہیں ،انہوں نے کہاکہ اس سلسلے میں آئی جی جیل خانہ سے رپورٹ طلب کرلی گئی ہے بلکہ ذمہ داروں کا تعین ہونے کے بعد ان کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائیگی ،انہوں نے کہاکہ وزیراعلیٰ نے ہدایت کی ہے کہ بیورو کریسی سے سختی سے کام لیاجائے ۔ان کاکہناتھاکہ سابقہ ادوار میں صوبے میں امن وامان کی صورت حال مثالی نہیں تھی بلکہ دہشتگردی کی افسوسناک واقعات ہوتے رہے دہشت گردی کے پیچھے دشمن ملک بھارت کا ہاتھ ہے وہ بلوچستان میں امن وامان کی صورتحال کو سبوتاژ کرنے کے درپے ہیں تاہم سیکورٹی فورسز ،پولیس اور لیویز نے جانوں کے نذرانے پیش کرتے ہوئے امن وامان کی صورتحال میں بہتری کو ممکن بنا کر دکھایاہے ،انہوں نے کہاکہ چیک پوسٹ کم کرنے سے بھتہ خوری اور دہشتگردی کم نہیں ہوگی اس سلسلے میں تاجروں سے ملاقات کرکے ان کے شکایات کے ازالے کی کوشش کرینگے ،انہوں نے کہاکہ ایگل اسکواڈ سے متعلق بھی شکایات آرہی ہیں جس کے ازالے کیلئے بھی اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ،انہوں نے کہاکہ ہم حکومتی سطح پر بھی قبائلی جھگڑوں کے خاتمے کیلئے کوشاں ہیں ،میر ضیاء لانگو نے اعلان کیاکہ بلوچستان حکومت جمعیت علماء اسلام کے آزادی مارچ میں کسی قسم کی خلل نہیں ڈالے گی بلکہ سمجھتے ہیں کہ احتجاج ہر انسان کا جمہوری وآئینی حق ہے ۔جمعیت علماء اسلام کے قائدین اور کارکن دھرنا دینا چاہتے ہیں تو وہ اپنے اس جمہوری حق کو استعمال کرسکتے ہیں ،انہوں نے کہاکہ وزیراعلیٰ بلوچستان کی جانب سے اس سلسلے میں کسی قسم کی احکامات نہیں ملے ہیں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں