جنوبی ایشیا سے غربت کے خاتمے اور مسائل کے پر امن حل کیلئے مشترکہ کاوشوں کو بروئے کار لایا جائیگا ،سیکرٹری خارجہ

0

اسلام آباد (این این آئی) سیکرٹری خارجہ سہیل محمود نے کہا ہے کہ 1985 کو سارک چارٹر کے ذریعے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ جنوبی ایشیا سے غربت کے خاتمے اور مسائل کے پر امن حل کیلئے مشترکہ کاوشوں کو بروئے کار لایا جائے گا ، سارک فورم سے مشترکہ کوششوں کے باوجود جنوبی ایشیا کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کیلئے ہمیں مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنا ہو گا ۔35 ویں سارک چارٹر ڈے کے حوالے سے وزارت خارجہ میں تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں سارک ممالک سے تعلق رکھنے والے سفرا اور وزارت خارجہ کے سینئر حکام نے شرکت کی ۔تقریب سے سیکرٹری خارجہ سہیل محمود اور سارک تنظیم کے سابقہ سیکرٹری جنرل اور پاکستان میں مالدیپ کے سفیر احمد سلیم نے اظہار کیا۔مالدیپ کے سفیر احمد سلیم نے کہا کہ سارک فورم جنوبی ایشیاء میں غریت کے خاتمے اور معاشی استحکام کے لئے معرض وجود میں آیا۔ ایمبیسٹڈر احمد سلیم نے کہاکہ ہمیں دیرپا ترقی سمیت دیگر متعینہ اہداف کے حصول کیلئے مشترکہ کاوشیں کرنا ہونگی ۔انہوںنے کہاکہ آج کا دن ہمیں اپنے عزم کا اعادہ کرنا ہے کہ ہم سارک کے پلیٹ فارم سے غربت کے خاتمے اور معاشی استحکام کو شرمندہ تعبیر کریں گے۔سیکرٹری خارجہ سہیل محمود نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 1985 کو سارک چارٹر کے ذریعے اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ جنوبی ایشیا سے غربت کے خاتمے اور مسائل کے پر امن حل کیلئے مشترکہ کاوشوں کو بروئے کار لایا جائے گا ۔ سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ سارک فورم سے مشترکہ کوششوں کے باوجود جنوبی ایشیا کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کیلئے ہمیں مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنا ہو گا ۔ انہوںنے کہاکہ سارک چارٹر ڈے غربت ،جہالت اور بیماریوں کے خاتمے کے عزم کی یاد دلاتا ہے۔ پاکستان سارک پراسس کو کامیاب بنانے کیلئیپ ر عزم ہے۔ سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے 35ویں سارک چارٹر ڈے پر سارک ارکان ممالک اور ان کی عوام کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ رہنماؤں نے جنوبی ایشیا کی ترقی اور خوشحالی کیلئیمل کر کام کرنے کیلئے سارک چارٹر مرتب کیا۔ پاکستان خطے میں باہمی تعاون سے ترقی کے مواقع فراہم کرنے پر یقین رکھتا ہے۔اس موقع پر ڈائریکٹر سارک انرجی سینٹر محمد نعیم ملک کی طرف سے خصوصی انرجی سٹال بھی لگایا گیا جس میں سارک ممالک کے پسماندہ علاقوں کے باسیوں کے لیے انرجی سلوشنز کے ماڈل پیش کئے گئے۔تقریب کے اختتام پر پینتیسویں سارک چارٹر ڈے کے حوالے سے کیک کاٹا گیا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.