گورنربلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے جان لیوا کروناوائرس کے خطرات کے پیش نظر کے حوالے سے کہا کہ احتیاط ہی واحد علاج ہے

0

گورنربلوچستان امان اللہ خان یاسین زئی نے جان لیوا کروناوائرس کے خطرات کے پیش نظر کے حوالے سے کہا کہ احتیاط ہی واحد علاج ہے مگر بے حتیاطی، موت کو خود دعوت دینے کے مترادف ہے. اس لئے ضروری ہے کہ عوام تمام حفاظتی تدابیر پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنائیں. اپنے ایک بیان میں گورنر یاسین زئی نے کہا کہ دنیا کے تمام ترقی پذیر اور خاصکر معاشی طور پر کمزور ممالک کیلئے جان لیوا کرونا وائرس پر قابو پانا مسئلہ نہیں ہے بلکہ اصل مسئلہ جدید حفاظتی طبی آلات اور دیگر ضروری سامان کی عدم دستیابی کا ہے۔ گورنر بلوچستان نے واضح کر دیا کہ بین الاقوامی اداروں کی مالی معاونت اور زندگی بچانے والی نت نئی ٹیکنالوجی کی فوری فراہمی نہ کرنے کی صورت یہاں کی صورتحال سنگین ہو سکتی ہے. انہوں نے کہا کہ پاکستان جیسے ممالک جہاں پہلے سے کل آبادی کا بڑا حصہ غربت کی لکیر سے نیچے کسمپرسی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہے وہاں کروناوائرس کے باعث مجموعی قومی معیشت پر مزید منفی اثرات مرتب ہوتے جا رہے ہیں. اسطرح غربت، مہنگائی اور بیروزگاری میں بھی بیتح ا شا اضافہ اپنی جگہ مسلمہ حقیقت ہے. گورنر یاسین زئی نے کہا کہ خدانخواستہ اگر کورونا بیماری کے متاثرین اور بالخصوص اموات کی تعداد میں اسی شرح سے اضافہ ہوتا رہا تو ہم من حیث القوم سنگین مشکلات سے دوچار ہو سکتے ہیں. اس ضمن میں گورنربلوچستان نے کہا کہ کورونا جیسے عالمی چیلنج سے نبرد آزما ہونے کیلئے عالمی اداروں کی فوری مالی معاونت اور طبی حفاظتی آلات کی فراہمی ہی مددگار ہوسکتے ہیں. اس وقت جان لیوا کروناوائرس سے نمٹنے کیلئے دونوں وفاقی اور صوبائی حکومتیں تو تمام دستیاب وسائل کو بروئے کار لار ہی ہیں مگر تمام تر حکومتی کاوشوں کی اصل کامیابی عوام کے بھرپور مددوتعاون سے ہی مشروط ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.