لاک ڈائون کھلتے ہی کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ ‘ اموات 706 ہو گئیں

0

اسلام آباد/کراچی/لاہور: کورونا وائرس نے اس وقت پوری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے تاہم پاکستان میں لاک ڈائون کھلتے ہی کیسز کی تعداد 32 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ 700 سے زائد لوگ جان کی بازی ہار گئے ہیں۔نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول سینٹر کی جانب سے جاری کر دہ اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں 10 ہزار 957 ٹیسٹ کیے گئے جس کے بعد ملک بھر میں 1140 نئے کیسز سامنے آئے ہیں اور متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 32 ہزار 81 ہو گئی ہے جبکہ 39 افراد موت کے آگے زندگی کی جنگ ہار گئے اور اموات 706 ہو گئی ہیں۔کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد سندھ میں اب پنجاب سے آگے نکل گئی ہے ، سندھ میں اس وقت تک 12 ہزار 17 افراد میں وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے جن میں سے 2149 صحت یا ہونے کے بعد گھروں کو لوٹ گئے ہیں تاہم 200 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔سندھ کے بعد پنجاب کا نمبر ہے جہاں کورونا وائرس کے کیسز 11 ہزار 869 ہو گئی ہے اور 211 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں تاہم 4 ہزار 452 افراد صحت یاب بھی ہوئے ہیں۔خیبر پختونخوا میں چار ہزار 875 افراد میں کورونا کی تشخیص ہو گئی ہے جن میں سیت 1256 ریکور کر گئے ہیں اور 257 افراد انتقال کر گئے ہیں۔ بلوچستان میں بھی کیسز میں اضافہ ہوتا دکھائی دے رہاہے جہاں متاثرہ افراد 2ہزار 61 ہو گئے ہیں جن میں سے 242 افراد صحت یاب ہوئے ہیں جبکہ 27 دنیا سے رخصت ہو گئے ہیں۔اسلام آباد میں 716 اور گلگت بلتستان میں مریضوں کی تعداد 457 پر آ گئی ہے ، اسلام آباد میں 72 صحت یاب اور چھ انتقال کر گئے ہیں جبکہ گلگت بلتستان میں اب تک وائرس کے باعث 4 افراد جان کی بازی ہار گئے ہیں جبکہ 320 مریض صحت یاب ہوئے ہیں۔آزاد کشمیر میں وائرس کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 86 ہو گئی ہے جبکہ 64 ٹھیک ہوئے ہیں تاہم ایک شخص انتقال کر گیا ہے۔کوروناوائرس کے کیسز کی تعداد دنیا بھر میں 41 لاکھ 77 ہزار 584 ہو گئی ہے جبکہ اب تک 2 لاکھ 86 ہزار 330 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں تاہم 14 لاکھ 56 ہزار 235 افراد صحت یاب ہونے کے بعد اپنے گھروں کو بھی لوٹ گئے ہیں۔کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک امریکہ ہے جہاں مریضوں کی تعداد 13 لاکھ 47 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ 80 ہزار سے زائد افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں تاہم 2 لاکھ 32 ہزار سے زیادہ مریض صحت یاب بھی ہوئے ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.