لبنان ، 11ہزار بنک ملازمین کی ہڑتال، بنکنگ سسٹم مفلوج

0

بیروت: لبنان میں حکومت کے خلاف جاری احتجاجی تحریک کے دوران گذشتہ روز 11 ہزار بنک ملازمین نے ہڑتال شروع کی ہے۔ دوسری طرف تاجر تنظیموں کی یونین نے کہا ہے کہ ملازمین کے مطالبات پورے ہونے تک کام پر واپسی نہیں ہوگی۔ حکومت کے پاس صرف ایک ہی راستہ ہے کہ وہ ملازمین کے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے تمام بنکوں کی سیکیورٹی یقینی بنائے اور دیگر مطالبات کے لیے غیرمعمولی اقدامات کیے جائیں۔لبنان میں بینک ایسوسی ایشن کے صدر سیٹریڈ یونین کے ایک وفد نے ملاقات کی جس کے بعد دونوں فریقوں نے اعلان کیا کہ صارفین کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے اے ٹی ایم کے ذریعے مسلسل رقوم فراہم کی جاتی رہیں گی۔لبنانی بینک ملازمین یونین کے سربراہ نے کہا کہ لبنانی دارالحکومت بیروت اور دیگر علاقوں میں منگل کے روز ہڑتال کی وجہ سے بینک بند ہوگئے تھے۔یونین کے صدر جارج الحاج نے کہا کہ ‘اے ٹی ایم’ کے ذریعے صارفین کو نقدی فراہم کی جاتی رہے گی۔بنک یونین جو کہ 11000 ملازمین کی نمائندگی کرتی ہے نے حفاظتی خدشات کے پیش نظر پیر کو ہڑتال کی کال دی اور بینکوں اور صارفین کے ذخائر واپس لینے کے مطالبات کے خلاف احتجاج کا اعلان دیا۔ بینکوں نے ڈالر کی واپسی اور بیرون ملک منتقلی پر پابندیاں عائد کردی ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.