مالی سال کی پہلی ششماہی میں غیر ملکی سرمایہ کاری میں 68 فیصد اضافہ

0

کراچی(این این آئی)ملک میں رواں مالی سال کی پہلی سہ ششماہی میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری 68.3 فیصد اضافے کے ساتھ 1.34 ارب ڈالر تک پہنچ گئی جہاں گزشتہ سال اسی دورانیے میں 79.68 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔میڈیارپورٹ کے مطابق ان میں سے اکثر سرمایہ کاری چین اور ناروے کی جانب سے ٹیلی کمیونیکیشن، توانائی اور الیکٹریکل مشینری کے شعبوں میں کی گئی اور اسٹیٹ بینک کے اعدادوشمار سے سرمایہ کاروں کی فہرست میں حیران کن طور پر مالٹا کی شمولیت کا انکشاف ہوتا ہے جس نے جولائی سے دسمبر تک 11.11کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کی۔براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری میں اضافے کی ایک وجہ ٹیلی کمیونیکیشن کمپنیوں وارد، ٹیلی نار اور زونگ کی جانب سے لائسنس کی تجدید کے لیے جمع کرائی گئی رقم ہے۔مختلف شعبہ جات کی بات کی جائے تو ٹیلی کمیونیکیشنز کے شعبے میں مجموعی طور پر مالی سال 2020 کی پہلی ششماہی میں 43.2 کروڑ ڈالر کی غیرملکی براہ راست سرمایہ کاری ہوئی جہاں گزشتہ سال اسی دورانیے میں مجموعی طور پر 12.63 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔ٹیلی کام کے ساتھ ساتھ توانائی کے شعبے میں بھی 28.97 کروڑ ڈالر کے ساتھ 41.6 فیصد کا اضافہ دیکھا گیا، ان میں سے آدھی سے زائد 15.3 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کوئلے سے چلنے والے پاور پلانٹس پر کی گئی البتہ جولائی سے دسمبر تک مالیاتی کاروبار میں براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کم ہو کر 16.21 کروڑ ڈالر تک پہنچ گئی جہاں گزشتہ سال اسی دورانیے میں 20.02 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کا رجحان دیکھا گیا تھا۔اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعدادوشمار کے مطابق حکومتی قرضوں کی دستاویزات میں ابتدائی 6 ماہ کے دوران غیرملکی پبلک سرمایہ کاری جیسے کہ ٹی بلز اضافے کے ساتھ 45.22 کروڑ ڈالر پر پہنچ گئے ہیں جس سے مجموعی بیرونی سرمایہ کاری 1.811 ارب ڈالر پر پہنچ گئی ہے جبکہ اس کے مقابلے میں گزشتہ سال اسی عرصے میں 3.7 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کی گئی تھی۔ملکوں کے اعتبار سے بات کی جائے تو چین بدستور پہلے نمبر پر موجود ہے جس کی جانب سے مجموعی 42.23 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کاری کی گئی جبکہ دوسرے نمبر پر ناروے موجود ہے جس کی جانب سے اسی عرصے میں 28.85 کروڑ ڈالر کی سرمایہ کی گئی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.