صوبائی حکومت بلوچستان میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی روک تھام کے لئے مختلف اضلاع میں ضلعی انتظامیہ کو معاونت فراہم کر رہی ہے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان

0

تربت :۔ وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت بلوچستان میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی روک تھام کے لئے مختلف اضلاع میں ضلعی انتظامیہ کو معاونت فراہم کر رہی ہے ہے تاکہ بلوچستان کے عوام کو اس وبائی مرض سے بچایا جا سکے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دورہ تربت کے موقع پر ٹیچنگ ہسپتال تربت کے آئیسولیشن وارڈ کے معائنہ کے موقع پر کیا وزیر اعلی کے ہمراہ ممبر صوبائی اسمبلی لالہ رشید دشتی ممبر صوبائی اسمبلی ماہ جبین شیران، کوآرڈینیٹر ٹو وزیر اعلی میر عبدالروف رند، کمشنر مکران طارق قمر بلوچ اور ڈپٹی کمشنر کیچ الیاس کبزئی اور دیگر حکام بھی شامل تھے۔ اس دوران وزیراعلیٰ نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اللہ تعالی کا شکر ہے کہ صوبہ بلوچستان میں کرونا وائرس کی وبا اتنی تیزی سے نہیں پھیلی جسکی توقع کی جارہی تھی انہوں نے کہا کہ صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے علاوہ صوبہ بلوچستان کے دیگر شہروں میں کرونا وائرس کے کنٹرول کرنے کی سب سے بڑی وجہ صوبائی حکومت کی جانب سے سخت اقدامات اور صوبے کا وسیع وعریض رقبہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں کرونا کے سب سے زیادہ کیسز کوئٹہ شہر میں ریکارڈ ہوئے ہیں جنکی تعداد 2000 سے کچھ زیادہ ہیں جو بلوچستان کے کیسز کے 80 فیصد کے قریب بنتے ہیں جبکہ دیگر کچھ اضلاع جسمیں نصیرآباد اور پشین شہر شامل ہیں میں چند کیسز بھی سامنیآنے ہیں جبکہ مجموعی طور پر باقی علاقوں میں صورتحال کنٹرول میں ہے۔انہوں نے کہا کہ انکے تربت شہر کے دورے کا مقصد مکران ڈویژن میں کرونا وائرس کے حوالے سے محکمہ صحت اور دیگر اداروں کی جانب سے اقدامات کا جائزہ لینا اور انکی نگرانی کرنا ہے تاکہ تربت اور ان سے منسلک علاقوں کو کرونا کی وبا سے مکمل طورپر محفوظ رکھا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ حالانکہ تربت شہر میں اب تک کرونا وائرس کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا ہے مگر ہمیں اپنی طرف سے بھر پور تیاری کرنا چاہیے۔ اس دوران انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت تربت شہر میں ICU آپریشن تھیٹر کا ایک نیا کمپلیکس تعمیر کرنے کا ارادہ رکھتی ہے تاکہ یہاں پر کرونا وائرس اور دیگر ایمرجنسی کے کیسز کا علاج صحیح طریقہ سے کیا جاسکے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے مختلف ضلعوں کو دوائیوں کی فراہمی کے لیے ایک پالیسی وضع کی ہے جس کے تحت ایم ایس ڈی کے ادارے کو ڈی سینٹرالز کیا جارہا ہے تاکہ ہسپتالوں کے لئے ضلعی سطح پر ضروری ادویات کی خریداری کو ممکن بنایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں کرونا وائرس کی صورتحال اور لاک ڈاؤن کے بعد صوبائی حکومت نے مختلف علاقوں میں راشن کی تقسیم کا عمل شروع کیا ہے اور وفاقی حکومت نے بھی بلوچستان کے دور دراز کے علاقوں میں احساس پروگرام کے تحت غریب اور نادار لوگوں میں کیش رقم بھی تقسیم کی ہے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے پہلی دفعہ بلوچستان کی تاریخ میں سارے علاقوں کی یکساں ترقی پر توجہ دے رہی ہے اور اس حوالے سے صوبائی پی ایس ڈی پی میں سب اضلاع کے لئے خطیر رقم مختص ہے ترجیح میں تعلیم صحت اور دیگر شعبے شامل ہیں انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے صوبائی بجٹ میں نہ صرف نیے اسکیمات شروع کیے ہیں بلکہ پچھلی حکومت کے مختلف اسکیموں کو بھی ترجیحی بنیادوں پر پایا تکمیل تک پہنچائے جارہے ہیں تاکہ پرانے اسکیموں کی بندش کے باعث فنڈز کا ضیاع نہ ہو سکے۔اس دوران انہوں نے کہا کہ ضلع کیچ کاشہر تربت بلوچستان کا ایک نہایت ہی اہم شہر ہے اور اس کی ترقی کے لئے سٹی ڈویلپمنٹ پروگرام کے دوسرے مرحلے کے تحت مختلف منصوبوں کو شروع کیا جارہاہے جسمیں مختلف شاہراہ ڈیمزاور دیگر منصوبے شامل ہیں انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں کے مکمل ہونے کے بعد تربت شہر کا ایک نیا پہچان اجاگر ہوگا انہوں نے انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ تربت بل نگور روڈ اور مند گوادر روڑ کو رواں مالی سال میں شروع کیا جارہا ہے جبکہ تربت بلیدہ روڑ کا کام بھی زور شور سے جاری ہے جو انشااللہ اگلے سال پایا تکمیل کو پہنچ جائے گی۔ علاوہ ازیں انہوں نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت نے اخوت پروگرام کے تحت بلوچستان کے عوام کیلیے ایک پروگرام شروع کیا ہے جس کے تحت 25 ہزار لوگوں کو 20 ہزار کا قرض بغیر کسی سود کے فراہم کیا جائے گا تاکہ لوگوں کی مشکلات میں کمی لائی جاسکیں۔اس دوران وزیر اعلی بلوچستان نے تربت میں کھجور کی زائد پیدا وار کو برآمد کرنے کے لیے زیر تعمیر ڈیٹ پروسیسنگ پلانٹ کو جلد شروع کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی۔ قبل ازیں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان نے کمشنر مکران کے آفس میں ایک اجلاس میں بھی شرکت کی جسمیں انہیں تربت سٹی ڈویلپمنٹ پروگرام اور بلیدہ ٹاؤن پروگرام کے تحت منصوبوں کے بارے میں کمشنر مکران طارق قمر بلوچ نے بریفنگ دی۔وزیر اعلیٰ بلوچستان نے ان منصوبوں کو ترجیحی بنیادوں پر جلد مکمل کرنے کے لیے کمشنر مکران اور دیگر متعلقہ اداروں کو ہدایات دیں انہوں نے کہا کہ ان منصوبوں کو مقررہ وقت پر مکمل کیئے جاہیں اور اس حوالے سے کام کے معیار پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جاہے۔ اس دوران ڈی ایچ او کیچ ڈاکٹر رحیم بلیدی نے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال خان کو تربت شہر میں کرونا وائرس کے تدارک کے لئے محکمہ صحت کے جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کے بارے میں بریفنگ بھی دی۔ اس دوران وزیر اعلی بلوچستان نے انہیں یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت اس حوالے سے ان کی ہر ممکن مدوتعاون کیلیے تیار ہے اور انکو ضروری ادویات کی فراہمی کے لیے فوری اقدامات کررہی ہے اس دوران محکمہ آبپاشی اور پی ایچ اے کے اہلکاروں نے بھی وزیراعلیٰ بلوچستان کو اپنے محکمہ کی جانب سے بریفنگ دی۔ اس دوران وزیراعلیٰ بلوچستان نے محکمہ پی ایچ ای کے اہلکاروں کو بلوچستان میں ٹیوب ویل کو سولر ٹیکنالوجی پر منتقلی کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔آخر میں وزیراعلیٰ بلوچستان نے ایف سی کیمپ تربت میں لا اینڈ آرڈر کے حوالے سے ایک اجلاس میں بھی شرکت کی جسمیں آئی جی ایف سی ساوتھ سرفراز علی اور دیگر عسکری حکام شامل تھے وزیراعلیٰ بلوچستان کو اس اجلاس میں بلوچستان کی مجموعی صورتحال اور امن و امان کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.