منامہ کانفرنس کی ناکامی پر امریکا کی جانب سے اعتراف

منامہ کانفرنس کی ناکامی پر امریکا کی جانب سے اعتراف

واشنگٹن(زیبائے پاکستان آن لائن)مغربی ایشیا میں نام نہاد قیام امن کے بارے میں امریکی صدر کے نمائندہ خصوصی نے اعتراف کیا ہے کہ مسئلہ فلسطین کے سیاسی حل کے حصول کے بغیر منامہ میں پیش کئے گئے اقتصادی منصوبے کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔ مغربی ایشیا میں نام نہاد قیام امن کے بارے میں امریکی صدر کے نمائندہ خصوصی جیسن گرینبلاٹ نے کہا کہ منامہ کانفرنس کی شکست کے ذمہ دار فلسطینی ہیں جنہوں نے منامہ کانفرنس کا بائیکاٹ کرکے ٹرمپ انتظامیہ پر اسرائیل کی جانبداری کی حمایت کا الزام جاری رکھا۔انہوں نے کہا کہ ٹرمپ کے مشیر اور داماد جیرڈ کوشنر نے منامہ کانفرنس کا اہتمام کرایا تھا امریکی انتظامیہ کی پیشہ ور ٹیم کے ساتھ پچاس ارب ڈالر مالیت کے اقتصادی پیکج کا پروگرام تیار کیا ہے لیکن جب تک مسئلہ فلسطین کے حل کے لئے کوئی سیاسی منصوبہ نہیں ہوگا اس وقت تک کوشنرکا منصوبہ کامیاب نہیں ہوسکے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں