امریکی کروز میزائل تجربہ، چین و روس کا سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کا مشترکہ مطالبہ

امریکی کروز میزائل تجربہ، چین و روس کا سلامتی کونسل کا اجلاس بلانے کا مشترکہ مطالبہ

بیجنگ/ماسکو(زیبائے پاکستان آئی این پی) امریکا کی جانب سے کروز میزائل کے کامیاب تجربے کے بعد روس اور چین نے اقوام متحدہ کے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ کردیا۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا کی طرف سے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے ایک کروز میزائل کے تجربے کے بعد روس اور چین نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا ایک ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ امریکی اقدام سے خطے کے امن کو شدید خطرات لاحق ہوگئے ہیں۔اس تجربے کے بعد دسنیا بھر میں ہتھیاروں کی ایک نئی دوڑ کا آغاز ہو سکتا ہے۔چین اور روس کی جانب سے امریکی میزائل کے تجربے کو سوچی سمجھی سازش قرار دیا ہے جس کے لیے امریکا نے پہلے جان بوجھ کر روس سے 1984 میں کیے گئے درمیانے فاصلے تک مار کرنے والے میزائل کے تخفیفی معاہدے سے دستبردار ہوا تھا اور پھر فورا میزائل کا تجربہ کردیا۔چین اور روس بھی امریکا کی طرح سلامتی کونسل کے 15 مستقل ارکان میں شامل ہیں تاہم دیکھنا ہے کہ تین عالمی قوتوں کے درمیان پیدا ہونے والے تنازع میں دیگر ارکان کس سمت جھکاو رکھتے ہیں اور کیا سلامتی کونسل امریکا کو میزائل تجربے سے باز رکھنے کا مینڈیٹ رکھتی بھی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں