چینی مصنوعات پر امریکی ٹیرف ، تجارتی خسارے کے مسئلہ کا حل نہیں، آئی ایم ایف

چینی مصنوعات پر امریکی ٹیرف ، تجارتی خسارے کے مسئلہ کا حل نہیں، آئی ایم ایف

ہیمبرگ(زیبائے پاکستان آئی این پی)عالمی مالیاتی ادارے(آئی ایم ایف) میں اقتصادیات کے سربراہ نے کہا ہے کہ امریکا کی جانب سے چینی مصنوعات پر ٹیرف لگانے سے تجارتی خسارے کا مسئلہ حل نہیں ہوگا اور نہ ہی شرح سود میں کمی سے امریکی ڈالر کمزور ہوگا۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق آئی ایم ایف کے چیف اقتصادیات گیتا گوپینات نے کہا کہ امریکی پالیسی کی سمت متضاد ہے، جس کی وجہ سے پسندیدہ نتائج کا حصول ممکن نہیں ہے۔انہوں نے اپنے بلاگ میں خبردار کیا کہ دونوں جانب سے ٹیرف میں اضافے سے مجموعی تجارت میں عدم توازن کا امکان نہیں کیونکہ دونوں ممالک اپنی تجارت کا رخ دیگر ممالک کی جانب موڑ دیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک اپنی مقامی صنعت کو نقصان پہنچائیں گے۔انہوں نے واضح کیا کہ صارفین اور صنعت کاروں کے لیے قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے کاروباری اعتماد، سرمایہ کاری اور عالمی سپلائی نظام بری طرح متاثر ہوگا۔آئی ایم ایف کے ماہر اقتصادیات نے کہا کہ کسی بھی ملک کا اپنی ہی کرنسی میں کمی کا منصوبہ گراں بار اور کارگر ثابت نہیں ہوگا۔عالمی ادارے کے چیف اکنامسٹ نے کہا کہ سینٹرل بینک پر دبا ئوسے طے شدہ مقاصد حاصل نہیں ہوسکیں گے۔ساتھ ہی انہوں نے خبردار کیا کہ کسی کو اس نظریے پر زیادہ توجہ نہیں دینی چاہیے کہ مالیاتی پالیسی میں نرمی سے ملک کی کرنسی کمزور ہوسکتی ہے اور اس کے نتیجے میں تجارتی توازن میں پائیدار بہتری ممکن ہے۔انہوں نے کہا کہ اگلے 12 ماہ کے عرصے میں مطلوبہ نتائج کے حصول کے لیے محض مالیاتی پالیسی میں مستقل کرنسی کی قدر میں کمی کا کوئی امکان نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں