بلوچستان نے ایران سے متصل اضلاع میں ایمرجنسی نافذ کردی

0

 کوئٹہ/اسلام آباد (این این آئی)ایران میں نئے کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی رپورٹس سامنے آنے کے بعد بلوچستان حکومت نے ایران سے ملنے والے اضلاع میں فوری طور پر ایمرجنسی نافذ کردی۔تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے بلوچستان کے وزیر اعلیٰ جام کمال سے رابطہ کرکے وائرس کو پاکستان میں داخل ہونے سے روکنے کے مسئلے پر تبادلہ خیال کیا۔انہوں نے وزیر اعلیٰ کو بتایا کہ صوبے کی ایران سے ملنے والی سرحد پر تمام تر حفاظتی اقدامات کیے جائیں۔وزیر اعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ وہ صوبائی حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات کی نگرانی کر رہے ہیں۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ صوبائی حکومت کے محکمہ صحت نے تفتان کے سرحدی علاقے میں ایمرجنسی سینٹر اور کنٹرول روم قائم کردیا ہے۔محکمہ صحت کے حکام نے بتایا کہ تفتان میں بنے کنٹرول روم میں دو ڈاکٹرز پہلے ہی کام کر رہے ہیں اور ایران میں کورونا وائرس سے 2 ہلاکتوں کی رپورٹس کے بعد تھرمل گنز کے ساتھ 7 ڈاکٹروں کی ٹیم کو تفتان میں تعینات کردیا گیا ہے جو زائرین سمیت ایران سے آنے والے دیگر افراد کی اسکریننگ کر رہے ہیں۔انہوںنے کہا کہ صوبائی محکمہ آفات (پی ڈی ایم اے) اور محکمہ صحت تفتان میں 100 بستروں پر مشتمل ٹینٹ ہسپتال قائم کر رہے ہیں تاکہ مشتبہ مسافروں کو طبی سہولیات فراہم کی جاسکیں۔ذرائع کے مطابق نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ہیلتھ (این آئی ایچ) کی خصوصی ٹیم بلوچستان پہنچ کر اسٹاف اور ڈاکٹروں کو حفاظتی اقدامات کے حوالے سے تربیت بھی دے گی۔وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے بھی بلوچستان کے وزیر اعلیٰ سے رابطہ کرکے ہر طرح کی مدد اور تعاون فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔صوبائی محکمہ صحت نے ایران سے واپس آنے والے زائرین کو قریبی ہسپتال میں اپنا میڈیکل چیک اپ کرانے کی ہدایت کی ہے۔ذرائع کے مطابق ڈاکٹروں کو سرحدی اضلاع بشمول گوادر، تربت، پنجگوڑ اور ماشخیل، میں بھیجا جائے گا۔این آئی ایچ کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر میجر جنرل ڈاکٹر عامر اکرام نے بتایا کہ اسلام آباد میں ایران میں کورونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کے مسئلے پر بحث کے لیے منعقدہ اجلاس میں تمام اسٹیک ہولڈرز نے شرکت کی۔انہوںنے کہاکہ تہران سے 140 کلومیٹر کی مسافت پر شہر قم میں 4 افراد ہلاک ہوچکے ہیں اور وائرس وہاں پہنچ چکا ہے، ہمیں فوری اقدامات کرنے ہوں گے کیونکہ وائرس سرحد کے ذریعے پاکستان بھی داخل ہوسکتا ہے۔ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوںنے کہاکہ 90 مشتبہ مریضوں کے سیمپلز این آئی ایچ کو موصول ہوئے تھے تاہم کسی میں بھی وائرس کی تشخیص نہیں ہوئی اور ہم کہہ سکتے ہیں پاکستان اب تک کورونا وائرس سے پاک ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.