رمضان المبارک میں مسلمانوں کو قربانی کا بکرا نہ بنایا جائے،امریکی وزیر خارجہ

0

واشنگٹن: امریکی سیکریٹری اسٹیٹ مائیک پومپیو نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ کورونا وائرس کے پھیلا ئوکی وجہ سے ماہِ رمضان المبارک کے دوران مسلمانوں کو قربانی کا بکرا بنانے سے گریز کیا جائے۔رمضان کے حوالے سے جاری کردہ اپنے پیغام میں ان کا کہنا تھا کہ یہ مقدس موسم پہلے ہی عالمی وبا کی وجہ سے مختلف صورت اختیار کرچکا ہے ایسے میں مسلمانوں سمیت کچھ مذہبی گروہوں کی مشکلات میں اضافہ ہوسکتا ہے۔امریکا میں رمضان کا آغاز جمعہ سے ہورہا ہے اس موقع پر مائیک پومپیو نے کہا کہ ہم تمام حکومتوں اور کمیونٹیز پر زور دیتے ہیں کہ اس وقت کو خدمت اور اتحاد پر توجہ دینے اور جیسا کہ کورونا وائرس بحران کو روکنے کے لیے جاری لڑائی میں کمزوروں اور پسماندہ طبقے کے افراد کی صحت اور تحفظ کو مدِ نظر رکھنے کے لیے استعمال کریں۔مائیک پومپیو کا کہنا تھا کہ رمضان تمام عقائد کے افراد کے لیے ہمدردی کی کوششیں کرنے، اپنے عمل پر غور کرنے اور اس بات کو یقینی بنانے کی یاددہانی ہے کہ مشکل وقت میں ہر شخص محفوظ رہے۔دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بھی ایسا ہی ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ جیسا کہ آج سے ماہِ رمضان کا آغاز ہورہا ہے میری دعا ہے کہ جو اس مقدس وقت کو پا رہے ہیں انہیں اپنے ایمان میں راحت ملے۔امریکی صدر کا کہنا تھا کہ گزشتہ مہینوں سے ہم نے دیکھا اس مشکل وقت میں دعا کی طاقت کتنی اہم ہوسکتی ہے، میں امریکا اور دنیا بھر کے تمام مسلمانوں کو ایک رحمت والا اور پر امن رمضان کی مبارکباد دیتا ہوں۔امریکی صدر کا مزید کہنا تھا کہ دنیا بھر میں لاکھوں افراد کے لیے رمضان روزے رکھنے، نماز پڑھنے تزکیہ نفس کرنے، قرآن کی تلاوت اور فلاحی کام کر کے اپنے ایمان کی تجدید اور اسے مضبوط کرنے کا موقع ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ اعمال ان آفاقی اقدار سے منسلک ہیں جسے مذہب اسلام فروغ دیتا ہے مثلا امن، رحم دلی، محب اور دوسروں کے احترام۔مائیک پومپیو کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ اس سال کورونا وائرس کے پھیلا نے رمضان کی روایات کو متاثر کیا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.