بوکوحرام کے حملوں میں چاڈ اور نائجیریا میں 150سے زائد فوجی ہلاک

0

ابوجہ(این این آئی)بوکوحرام کے حملوں میں نائجیریا کے مشرقی صوبے بورنو میں کم از کم 50 فوجی اور چاڈ میں تقریبا ً100 فوجی مارے گئے ۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق چاڈ کے صدر ادریس دیبی نے بتایا کہ سات گھنٹے تک جاری رہنے والا یہ حملہ چاڈ میں مسلح افواج کے خلاف عسکریت پسند گروپ کا اب تک کا سب سے بھیانک حملہ تھا۔ انہوں نے کہا کہ بوما میں اتوار کو ہوئے اس حملے میں ہم نے اپنے 92 جوان، نان کمیشنڈ افسران اور افسر کھودیے۔ یہ پہلا موقع ہے جب ہمیں اپنے اتنے ڈھیر سارے جوانوں سے ہاتھ دھونا پڑا ہے۔بوکو حرام نے یہ حملہ لاک صوبہ میں بوما جزیرہ نما علاقے میں کیا، جس کی سرحدیں نائیجر اور نائجیریا سے ملتی ہیں۔چاڈ کے ایک سینئر فوجی افسرنے بتایاکہ دشمن نے اس علاقے میں ہماری افواج پر بہت شدید حملہ کیا۔‘‘حملے کا شکار ہونے والی فوج کی مدد کے لیے اضافی نفری بھیجی گئی ہے۔ادھر نائجیریا میں بھی بوکو حرام نے ایک اور حملے میں نائجیریا کے کم از کم پچاس فوجیوں کو ہلا ک کردیا۔ عسکریت پسند تنظیم نے مشرقی صوبہ بورنو میں فوجیوں کو نشانہ بنایا۔نائجیریا کی وزارت دفاع کے ترجمان جان ایننچے نے دارالحکومت ابوجا میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ اس افسوس ناک حملے میں نائجیریا کی فوج کے کئی جوان مارے گئے ہیں۔ایننچے نے حالانکہ ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد نہیں بتائی تاہم خبر رساں ایجنسی نے مقامی عینی شاہدین کے حوالے سے بتایا کہ اس حملے میں پچاس اور پچہتر کے درمیان فوجی مارے گئے ۔ایننچے نے بتایا کہ یہ حملہ گونیری کے قریب ہوا جہاں ہتھیار اور گولہ بارود لے جارہی فوج کی ایک گاڑی پرعسکریت پسندوں نے حملہ کردیا۔ حملے میں گاڑی دھماکے سے اڑ گئی جس کی وجہ سے بڑی تعداد میں ہلاکتیں ہوئی ہیں۔بوکو حرام کے یہ حملے اس عسکریت پسند تنظیم کی طرف سے چاڈ، نائجر اور کیمرون کے خلاف جاری حملوں کے سلسلے کی تازہ کڑی ہیں۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.