میاں نوازشریف کو آئین کی بالادستی اور ووٹ کو عزت دینے سمیت بلوچستان سے محبت کی سزا دی جارہی ہے مریم نواز

میاں نوازشریف کو آئین کی بالادستی اور ووٹ کو عزت دینے سمیت بلوچستان سے محبت کی سزا دی جارہی ہے مریم نواز

کوئٹہ (زیبائے پاکستان آئی این پی)پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی نائب صدر مریم نوازنے کہاہے کہ میاں نوازشریف کو آئین کی بالادستی اور ووٹ کو عزت دینے سمیت بلوچستان سے محبت کی سزا دی جارہی ہے ،انہوں نے بلوچستان کی عوام سے آئین کی بالادستی اور پاسداری کاجووعدہ کیاتھا اسی کی پاداش میں وہ آج پابند سلاسل ہے ،بلوچستان میں 10سے باپ کے نام سے پارٹی کہاں سے آئی الیکشن سے قبل سیاسی رہنمائوں کو پارٹی اور وفاداریاں تبدیل کرنے کا کہاگیاجنہوں نے خوداری اور غیرت کامظاہرہ کیا گیا انہیں نہ صرف چن چن کر پارلیمنٹ سے باہر کیا گیا بلکہ ان کے خلاف جھوٹے مقدمات اور نیب کے کیسز بنائے گئے کسی کو منشیات توکسی کو 1956اور 1960ء کے مقدمات میں اندر کیا گیاہے ،نااہل اور سلیکٹڈ حکومت کو ختم کرنے کیلئے ملک بھر کی عوام نے اسلام آباد مارچ کیا تو بلوچستان کی عوام بھی بھرپور انداز سے آئے گی ،پاکستان کاپرچم میری جیسی لاکھوں مائوں ،بہنوں اور بیٹیوں کا دوپٹہ ہیں اس کی تقدیس کا ہم سب خیال رکھیںگے ،ملکی ادارے نالائق اور نااہل شخص کی ناکامی کا بوجھ اپنے کندھوں پر نہ لیں عوام اداروں کی عزت کرناجانتی اور ان سے پیار کرتی ہے

۔ان خیالات کااظہار انہوں نے اپوزیشن میں شامل جماعتوں پشتونخواملی عوامی پارٹی ،پاکستان مسلم لیگ(ن) ،عوامی نیشنل پارٹی ،جمعیت علماء اسلام ،نیشنل پارٹی ،پاکستان پیپلزپارٹی ،مرکزی جمعیت اہل حدیث کے زیراہتمام کوئٹہ کے ایوب اسٹیڈیم میں یوم سیاہ کی مناسبت سے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جلسے سے پشتونخواملی عوامی پارٹی کے سربراہ محمود خان اچکزئی ،عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین ،نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر ڈاکٹرعبدالمالک بلوچ ،جمعیت علماء اسلام کے صوبائی امیر مولاناعبدالواسع ،پاکستان پیپلزپارٹی کے صوبائی صدر حاجی میر علی مدد جتک ،مرکزی جمعیت اہل حدیث کے مولاناعصمت اللہ سالم ودیگر نے بھی خطاب کیا۔پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی نائب صدر مریم نوازکاکہناتھاکہ جب محمود خان اچکزئی نے مجھے دعوت دی تو میں لاہور میں یوم سیاہ کا جلسہ چھوڑ کر بھاگ کر کوئٹہ آپ کے پاس آئی ،میاں محمدنوازشریف بلوچستان سے محبت کرتاہے اور وہی محبت انہوں نے میرے دل ودماغ میں بھی ڈال دی ہے اس بات کی گواہی اسٹیج پر موجود سیاسی رہنماء اور کارکن ہی نہیں دینگے بلکہ چاغی کے پہاڑ بھی نوازشریف کی محبت کی گواہی دے رہے ہیں ،بلوچستان کو سلام پیش کرتی ہوں جب پاکستان کو ایٹمی قوت بننا تو اسی بلوچستان نے اپنا سینہ پیش کیا،2دسمبر2017ء کو میاں نوازشریف خان شہید عبدالصمد خان اچکزئی کی برسی کے موقع پر یہاں جلسے کیلئے تشریف لائے تھے تو یہاں بلوچستان کی عوام سے وعدہ کیا کہ وہ آئین کی پاسداری اور بالادستی کے مطالبے سے پیچھے نہیں ہٹیںگے ،اسی وعدے کو نبھانے کی پاداش میں بے گناہ ہونے کے باوجود بھی پابند سلاسل ہے بلکہ اس وعدے کو نبھانے کی وجہ سے آپ کی بہن کو بھی جیل میں پھینک دیاگیا،آج یوم سیاہ اس لئے منا رہے ہیں ایک سال پہلے آپ کی مینڈیٹ کو پائون تلے روندھاگیاتھا اوربلوچستان میں باپ پارٹی کو اقتدار سونپا گیا ،5سو ووٹ لینے والاآپ کے سر پر مسلط کردیاگیا ہے

میاں نوازشریف کو آئین کی بالادستی اور ووٹ کو عزت دینے سمیت بلوچستان سے محبت کی سزا دی جارہی ہے مریم نواز

نا شرم کی بات ،پچھلے دو تین سال سے ہر محب وطن پاکستانی بلوچستان کی عوام کی طرح یہ گواہی دے گا کہ پاکستان کا ہردن یوم سیاہ ہے جب الیکشن سے پہلے یہ پارٹی بنی میں پوچھنا چاہتی ہوں کہ کہاں سے آئی دس دن میں یہ پارٹی جس طرح یہ پارٹی بنی جس طرح عوام کے حقیقی نمائندوں کو چن چن کر پارلیمنٹ سے باہر کیاگیا ان کو پارٹی اور وفاداریاں تبدیل کرنے کا کہاگیا جس نے خوداری اور غیرت کامظاہرہ کیا اور اپنی پارٹی نہیں چھوڑی ان کے اوپر جھوٹے مقدمات اور نیب کے کیسز بنائے گئے ،کسی کو منشیات تو کسی کو 1956اور 1960کے مقدمات میں اندر کردیاجاتاہے ،میں پوچھنا چاہتی ہوں کہ کیا آج یوم سیاہ نہیں کہ ایک نااہل اورسلیکٹڈ وزیراعظم کو آپ کے سروں پر مسلط کیاگیاہے اور وہ کہتاہے کہ جیل میں اے سی اور کھانے کی میاں نوازشریف ودیگر کوسہولیات ختم کردی جائیںگی،آج مریم نواز ٹی وی پر نہیں پارٹی کارکنوں کے علاوہ صحافیوں کو بھی ہمیں کوریج نہ دینے کیلئے دھمکیاں دی جاتی ہے ،ہم جانتے ہیں کہ اس عظیم الشان جلسے کو بھی کوئی کوریج نہیں دی جائیگی ،انہوں نے کہاکہ سابق صدر پرویزمشرف نے بلوچستان میں ظلم کئے اور جگہ جگہ آگ لگائی اسی آگ کو میرے والد میاں محمدنوازشریف نے بجھانے کی کوشش کی بلکہ ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگایا ،انہوں نے کہاکہ ووٹ کو عزت دینے کا عملی مظاہرہ میاں محمد نوازشریف نے سال 2013ء کے عام انتخابات کے بعد بھی کیا،بلوچستان میں مسلم لیگ(ن) کو اکثریت حاصل تھی اور وہ حکومت بنا سکتی تھی لیکن میاں محمد نوازشریف نے ووٹ کو عزت دیتے ہوئے ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کو حکومت دی بلکہ خیبرپشتونخوا میں بھی پاکستان تحریک انصاف کو حکومت بنانے کی سہولت دی ،انہوں نے کہاکہ آج جب چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کی باری آئی ہے تو اس کیلئے بھی میرے بابا نے مسلم لیگ(ن) کی اکثریت کے باوجود بلوچستان سے میر حاصل بزنجو کانام دیا ،میاں محمدنوازشریف نے روز اول سے عوام کے دلوں اور صوبوں کو جوڑنے کی کوشش کی ہے جو حقیقی عوامی نمائندے کا خاصا ہواکرتاہے ،انہوں نے کہاکہ میاں محمدنوازشریف نے سی پیک کے ذریعے بلوچستان کو ملک بھر سے جوڑا بلکہ کئی نئے منصوبے بھی ڈالے اسی لئے سی پیک منصوبہ کی لاگت 60ارب ڈالر تک پہنچی ،انہوں نے کہاکہ گوادر پورٹ کو بھی میاں محمد نوازشریف نے دنیا کی کامیاب اور ایکٹو پورٹ بنانے کی کوشش کی آج اس لئے یوم سیاہ ہے کہ پاکستان میں ترقی کا پلڑہ جھک چکاہے

،انہوں نے جلسہ گاہ میں موجود کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ اپنے بے قصور والد کامقدمہ بلوچستان کی عوام کے سامنے رکھنے کیلئے آئی ہے ،انہوں نے جج کی ویڈیو کا ذکر کیا اور کہاکہ آپ سب نے جج کی ویڈیو دیکھی ہوگی جس نے اپنے منہ سے کہہ دیاکہ میاں نوازشریف پر ایک روپے کی کرپشن ،منی لانڈرنگ ودیگر کاالزام ثابت نہیں ہوسکاہے ،انہوں نے جلسہ گاہ میں موجودافراد کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ وہ جواب دیں کہ کیا نوازشریف بے گناہ نہیں ہے جس پر لوگوں نے اثبات میں جواب دیاتوانہوں نے کہاکہ کیا بلوچستان کی عوام میاں نوازشریف کی رہائی چاہتی ہے؟ انہوں نے کہاکہ میری ملک کے اداروں سے درخواست ہے کہ وہ بلوچستان ،پنجاب ،سندھ ،خیبرپشتونخوا اور گلگت بلتستان کے ادارے بنیں ایک نالائق اور نااہل شخص کے ادارے نہ بنیں کیونکہ یہ ادارے عوام کے ہیں ایک نااہل اور نالائق شخص اور سلیکٹڈ نمائندے کے نہیں ،انہوں نے کہاکہ آج اداروں سے بلوچستان ،پنجاب ،سندھ ،خیبرپشتونخوا کے لوگ ناراض ہیں اس لئے اداروں کو چاہیے کہ وہ عوام کاساتھ دیں عوام اپنے اداروں کو عزت دینا جانتی ہیں اور انہیں اپنے ملک کی اداروں سے پیار ہیں ،انہوں نے کہاکہ ریاست ماں ہوتی ہے جب کہ اداروں کاکردار بھی ماں باپ جیساہے میری اداروں سے درخواست ہے کہ وہ ایک نااہل اور نالائق شخص کی ناکامی کا بوجھ اپنے کاندھوں پر نہ لیں ،انہوں نے کہاکہ جب تک ملک میں عوام کے حقیقی منتخب نمائندے برسراقتدار نہیں آئیںگے اور ووٹ کو عزت نہیں ملے گی اس وقت تک ملک کودرپیش بحران اور مسائل ختم نہیں ہونگے ،انہوں نے کہاکہ پاکستان کاجھنڈا میری طرح کروڑوں مائوں ،بیٹیوں اور بہنوں کا دوپٹہ ہیں اس سے عزت دیں انہوں نے جلسہ گاہ میں موجود سیاسی کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ اگر پنجاب ،سندھ خیبرپشتونخوا کی عوام حکومت کو آخری دھکہ دینے کیلئے اسلام آباد کی طرف لانگ مارچ شروع کرتی ہے تو کیا بلوچستان کی عوام وہاں آئیںگے اور کیا وہ اس سلسلے میں ان کے ساتھ وعدہ کرینگے جس پر جلسہ گاہ میں موجود افراد نے جی ہاں کا نعرہ لگایا ،مریم نواز نے پاکستان اور بلوچستان زندہ بعد کے نعرے لگائے اور کہاکہ میری دعا ہے کہ اللہ پاکستان اور بلوچستان کی عوام کاحامی وناصر ہو انہوں نے تقریر کے اختتام پر بلوچستان زندہ باد اور پاکستان پائندہ باد کا نعرہ لگایا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں