سپریم کورٹ کا ریلوے خسارہ کیس میں وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشیداحمد ، سی ای او اور سیکرٹری ریلوے کو (آج)طلب کرلیا

0

اسلام آباد (این این آئی) سپریم کورٹ آف پاکستان آف نے ریلوے خسارہ کیس میں وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشیداحمد ، سی ای او اور سیکرٹری ریلوے کو (آج)طلب کرلیاہے جبکہ عدالت عظمیٰ نے ریلوے سے متعلق آڈٹ رپورٹ میں آنے والے حقائق پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریلوے کو اربوں روپے کا خسارہ ہورہا ہے ، آڈٹ رپورٹ نے واضح کر دیا ہے،ریلوے کاپورامحکمہ سیاست میں پڑاہواہے،روزحکومت گرارہاہے اوربنارہاہے،انکاکام نہیں وزارت سنبھالنااورنہ ہی وہ وزارت سنبھال رہاہے ۔ پیر کو چیف جسٹس گلزار احمد کی سربراہی میں بینچ نے کیس کی سماعت کی ۔ دور ان سماعت سپریم کورٹ نے ریلوے سے متعلق آڈٹ رپورٹ میں آنیوالے حقائق پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے وفاقی وزیرریلوے شیخ رشیداحمد،سی ای اوریلوے اورسیکرٹری ریلوے کو (آج) طلب کرلیا ۔ چیف جسٹس نے کہاکہ آپ کاساراریکارڈمینوئل ہے،اس کامطلب ہے کہ ایک لاکھ کی ریکوری میں25ہزارظاہرکیاجاتاہے جبکہ75ہزارغائب ہوجاتاہے۔ جسٹس اعجاز الاحسن نے کہاکہ ریلوے کواربوں روپے کاخسارہ ہورہاہے آڈٹ رپورٹ نے واضح کردیاریلوے کانظام چل ہی نہیں رہا۔ چیف جسٹس نے کسی کا نام لئے بغیر کہاکہ دنیابلٹ ٹرین چلاکرمزیدآگے جارہی ہے،جسکوریلوے وزارت درکارہے اس کو خودپہلے ریلوے میں سفرکرناہوتاہے،ریلوے کاپورامحکمہ سیاست میں پڑاہواہے،روزحکومت گرارہاہے اوربنارہاہے،انکاکام نہیں وزارت سنبھالنااورنہ ہی وہ وزارت سنبھال رہاہے۔چیف جسٹس نے کہاکہ محکمہ ریلوے نہ مسافر ٹرین چلاپارہاہے نہ ہی مال گاڑی ،ریلوے پرسفرکرنیوالاہرفردخطرے میں سفرکرتاہے،نہ ریلوے اسٹیشن اسٹیشنزہیں نہ ٹریک اورنہ ہی سنگل سسٹم۔چیف جسٹس نے کہاکہ ریلوے سیکرپٹ پاکستان میں کوئی ادارہ نہیں،ریلوے میں کوئی بھی چیزدرست اندازمیں نہیں چل رہی۔چیف جسٹس نے کہاکہ ہم پاکستان میں اٹھارویں صدی کی ریل چلارہے ہیں،ریلوے میں جوآگ لگی تھی اس معاملے کاکیاہو۔ وکیل ریلوے نے کہاکہ معاملے پرانکوائری ہوئی ہے اور2آدمیوں کیخلاف کارروائی ہوئی ہے،چولہے میں پھینک دیں اپنی انکوائری ۔چیف جسٹس نے کہاکہ پاکستان ریلوے کے سی ای اوعدالت پیش کیوں نہیں ہوئے۔ وکیل ریلوے نے کہاکہ سابق سی ای اوکونوٹس گیاہے موجودہ کونہیں۔ چیف جسٹس نے کہاکہ سابق سی ای اوکو نوٹس گیاہے اس کے باوجوداہم کیس تھاموجودہ سی ای اوکوپیش ہوناچاہئے تھا۔چیف جسٹس نے کہاکہ بلوالیں اپنے سی ای اوکو،وہ کہاں ہیں؟۔ وکیل ریلوے نے کہاکہ سی ای اواس وقت لاہورمیں ہیں۔ بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت (آج) منگل تک کیلئے ملتوی کردی گئی ۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.