صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاءاللہ لانگو کی شدت پسندوں کی طرف سے نوجوان کو قتل کرنے کے دلخراش واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت

0

صوبائی وزیر داخلہ میر ضیاءاللہ لانگو کی شدت پسندوں کی طرف سے نوجوان کو قتل کرنے کے دلخراش واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو واقعے کی تیزرفتار انکوائر ی کرنے اوررپورٹ پیش کرنے کی ہدایت اس گھناونا فعل کے مرتکب عناصر کو عبرتناک سزاد ی جائے گی درندگی کے مرتکب عناصر کسی رعایت کے مستحق نہیں جلد انجام کو پہنچنے گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے اعلی سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ حافظ عبدالباسط،ایڈیشنل آئی جی پولیس عبدالرزاق چیمہ ،کمشنر کوئٹہ عثمان علی خان ڈپٹی کمشنر کوئٹہ اورنگزیب بادینی موجود تھے۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ زخمیوں کی جانب سے نشاندہی کرنے والے افراد کو پولیس نے گرفتار کر لیا ہے اور لواحقین کی جانب سے سے تمام کمانڈ مکمل کیے جانے کے بعد آباد دھرنا بھی ختم کیا گیا ہے ہے انہوں نے کہا کہ اب تک واقع میں 12 ملوث افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہےعلاقہ ایس اہچ او کو ڈیوٹی سے غفلت برتنے پر معطل کر دیا گیا ہے ملوث افراد کو کیفر کردار تک پہنچانے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہے انہوں نے اس بات پر زور دیا ہمیں قومیتوں اور فرقوں میں تقسیم کرنا دشمنوں کی چال ہےظلم کرنے والوں کے ساتھ کسی قسم کی کی رعایت نہیں برتی جائیگی حکومت مظلوم خاندار کے اہل خانہ کے شانہ بشانہ کھڑی ہےہزارہ ٹاون میں افسوس ناک واقع رونما ہواجس پر پوری قوم غم زدہ ہے ظم و بربریت برپا کرنے والے ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچایا جائیگا بےگناہ اور نہتے لوگوں کا قتل ایک گھناو¿نا اور غیر انسانی فعل ہے ہم آزمائش کی اس گھڑی میں بلوچستان حکومت اور غمزدہ خاندانوں کے ساتھ کھڑے ہیں وزیر داخلہ نے زخمیوں کو مزید بہتر علاج کے لیے کراچی بھجوانے کے احکامات جاری کیے اور شہید ہونے والے نوجوان کی درجات کی بلندی اور لواحقین کیلئے صبر و استقامت کی د±عا۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.