ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے انسداد تمباکو نوشی کے عالمی دن کی مناسبت سے اپنے پیغام

0

 ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے انسداد تمباکو نوشی کے عالمی دن کی مناسبت سے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ آج دنیا بھر میں خاموش اور مہلک قاتل تمباکو نوشی کے بارے میں شعور اجاگر کرنے کا دن منایا جا رہا ہے۔ تمباکو نوشی سے سالانہ لاکھوں افراد موت کے منہ میں چلے جاتے ہیں۔ آج کا دن منانے کا مقصد دنیا بھر کے لوگوں میں تمباکو نوشی کے مضر اثرات کے بارے میں شعور بیدار کرنا اور آگاہی پیدا کرنا ہے۔ اس دن کا ایک مقصد یہ بھی ہے کہ دنیا بھر میں بسنے والے اربوں انسانوں کو یہ پیغام دیا جائے کہ کس طرح تمباکو نوشی انسانی صحت کو متاثر کرتی ہے اور مختلف بیماریوں کو دعوت دیتی ہے۔ کورونا وائرس کی وبا کے پیش نظر دنیا کے بیشتر ممالک میں لوگوں کی نقل و حرکت پر پابندی عائد ہے۔ زیادہ تر دفاتر بھی بند ہیں، یا پھر لوگ گھروں میں بیٹھ کر کام کر رہے ہیں۔ دنیا بھر میں ذہنی دباو¿ کی موجودہ کیفیت کے دوران سگریٹ، حقہ، ای سگریٹ، شیشہ جیسی کئی نشہ آور اشیاء کے استعمال میں اضافہ ہوا ہے۔لیکن یہ وقت زیادہ سگریٹ پینے کا نہیں، بلکہ اسے کم کرنے یا مکمل طور پر ترک کر دینے کا وقت ہے۔ کیوں کہ سگریٹ یا ایسی دوسری مصنوعات کا استعمال کرنے والے افراد خود کو دوہرے خطرے میں ڈال رہے ہیں۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق سگریٹ اور اس جیسی دیگر مصنوعات استعمال کرنے والے افراد کے کووِڈ انیس مرض میں مبتلا ہونے کے خطرات دیگر افراد کی نسبت زیادہ ہوتے ہیں۔اس بات کی وضاحت کرتے ہوئے بتایا گیا ہے کہ سگریٹ پینے والے افراد کے ہاتھ پر اگر کورونا وائرس موجود ہو، تو سگریٹ پینے کے باعث وائرس کے ان کے منہ تک پہنچ جانے کا خطرہ ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمباکو نوشی ایک ایسی معاشرتی برائی بنتی جا رہی ہے جو نوجوان نسل کو دیمک کی طرح چاٹ رہی ہے۔صوبائی حکومت وزیراعلی جام کمال خان کی قیادت میں اس معاشرتی برائی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے پرعزم ہے جس کے لیے تمام دستیاب وسائل بروئے کار لائے جائیں گے نوجوان نسل کو اس سماجی برائی میں مبتلا ہونے سے ہر حال میں بچانا ہے جس کے لئے کھیلوں کے میدان آباد کرنے کی ضرورت ہے جس پر صوبائی حکومت نیک نیتی سے کام کر رہی ہے۔محدود وسائل کے باوجود مالی سال2020_2019کے بجٹ میں اس ضمن میں صوبائی حکومت خطیر رقم مختص کر چکی ہے جو حکومت کی نیک نیتی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ اس لعنت میں مبتلا افراد نہ صرف خود کو تباہی کی راہ پہ گامزن کیے ہوئے ہیں بلکہ اپنے پورے خاندان کی تباہی و بربادی کا سبب بن رہے ہیں اس سماجی برائی کا تدارک ہر حال میں کرنا ہوگا ورنہ آنے والی نسلیں ہمیں کبھی معاف نہیں کرے گی انہوں نے کہا کہ پختہ ارادہ اور عزم کر لیا جائے تو اس لعنت سے نجات ممکن ہے۔ انھوں نے سگریٹ نوشی کرنے والوں پر زور دیا ہے کہ وہ عالمی وباءکرونا وائرس سے محفوظ رہنے کیلئے تمباکو نوشی ترک کرتے ہوئے احتیاطی تدابیر اختیار کریں تاکہ اس وائرس کا پھیلاو¿ روک کر قیمتی انسانی جانوں کو بچایا جاسکے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.