باچا خان چوک کے قریب پولیس گاڑی پر دھما کہ، ایڈیشنل ایس ایچ او سمیت 4 افرادجاں بحق،دو درجن سے زائد زخمی

باچا خان چوک کے قریب پولیس گاڑی پر دھما کہ، ایڈیشنل ایس ایچ او سمیت 4 افرادجاں بحق،دو درجن سے زائد زخمی

کوئٹہ (زیبائے پاکستان آئی این پی)صوبائی دارالحکومت کوئٹہ کے علاقے باچا خان چوک کے قریب پولیس گاڑی پر دھماکے کے نتیجے میں ایڈیشنل ایس ایچ او سمیت 4جاں بحق جبکہ دو درجن سے زائد زخمی ہوگئے ہیں ،زخمیوں میں سے بعض کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے ،صوبائی سیکرٹری صحت کی جانب سے کوئٹہ کے ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے گورنر ،وزیر اعلیٰ بلوچستان سمیت مختلف سیاسی ومذہبی جماعتوں کے رہنمائوں نے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے اس میں جاں بحق اور زخمی افراد کی اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔پولیس کے مطابق منگل کے روز بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے علاقے باچا خان چوک کے قریب پولیس گاڑی پر دھماکے کے نتیجے میں ایڈیشنل ایس ایچ او چوہدری شفاعت مرزا سمیت 4افراد جاں بحق جبکہ دو درجن سے زائد زخمی ہوئے ہیں جن میں سے بعض کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے ،ایدھی ،چھپیا اور جائے وقوعہ پرموجود افراد ،رکشہ ڈرائیوروں نے لاشوں اور زخمیوں کو رکشوں اورایمبولینسز کے ذریعے ہسپتال منتقل کردیا،قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں نے جائے وقوعہ پرپہنچ کر علاقے کی ناکہ بندی کردی ،دھماکے سے لوگوں میں خوف وہراس پھیل گیا جس کے بعد آس پاس کی دکانیں بند کردی گئی ،صوبائی سیکرٹری صحت کی جانب سے کوئٹہ کے ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور چھٹی پر جانے والے طبی عملے کو فوری طور پر ہسپتال طلب کرلیاگیاہے ۔ڈپٹی انسپکٹرجنرل کوئٹہ عبدالرزاق چیمہ نے کہاکہ ایڈیشنل ایس ایچ او زخمی ہوگئے ہیں جنہیں طبی امداد کیلئے ٹراما سینٹر منتقل کردیاگیاہے ،انہوں نے کہاکہ بم دھماکے پولیس کو نشانہ بنایاگیاہے ۔میڈیکل سپرنٹنڈنٹ سول ہسپتال ڈاکٹر سلیم ابڑو کے مطابق سول ہسپتال میں ایمرجنسی نافذ کردی گئی ڈاکٹرز اور پیرامیڈیکس کو طلب کرلیاگیاہے ،ڈپٹی ایم ایس سول ہسپتال کے مطابق دھماکے میں 28کے قریب افراد زخمی ہوگئے ہیں جب کہ زخمیوں میں 2پولیس جوان بھی شامل ہیں ،ریسکیو ذرائع کے مطابق زخمیوں میں 3پولیس جوان ،2خواتین اور 3بچے بھی شامل ہیں ،دوسری جانب گورنربلوچستان جسٹس(ر)امان اللہ یاسین زئی نے کوئٹہ بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ زخمیوں کو بہتر طبی سہولیات کی فراہمی یقینی بنائیں ،انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں پر زوردیاکہ وہ اس میں ملوث ملزمان کی گرفتاری کویقینی بنانے کے ساتھ ساتھ امن وامان کی صورتحال کو بہتر بنائیں ۔علاوہ ازیں وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان اور صوبائی کابینہ نے بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے اس میں قیمتی انسانی جانوں پر افسوس کااظہار کیا،وزیراعلیٰ بلوچستان نے دہشتگردی کے واقعہ کی رپورٹ طلب کرلی اور کہاکہ بے گناہ لوگوں کو بربریت کا نشانہ بنانے والے عناصر سخت سزا کے مستحق ہیں،انہوں نے کہاکہ ملک دشمن عناصرکو دہشت گردی کے ذریعے ناپاک عزائم کی تکمیل نہیں کرنے دی جائے گی،دہشت گرد ی کے خاتمے کے قومی عزم کو کمزور نہیں کیا جا سکتا،انہوں نے کہاکہ سیکیورٹی اداروں کی کاوشوں اور قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دیا جائے گا،دہشت گرد عناصر اور ان کے سرپرستوں کو ہر صورت کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا،انہوں نے ہدایت کی کہ ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کرکے زخمیوں کو علاج معا لجہ کی بہترین سہولتیں فراہم کی جا ئیں بلوچستان کی سیاسی ومذہبی جماعتوں عوامی نیشنل پارٹی ضلع کوئٹہ،جمعیت علماء اسلام کے صوبائی امیر مولاناعبدالواسع،پشتونخواملی عوامی پارٹی ،بلوچستان عوامی پارٹی ،پاکستان پیپلزپارٹی بلوچستان کے صوبائی صدر حاجی علی مدد جتک، جنرل سیکرٹری سید اقبال شاہ،سیکرٹری اطلاعات سردار سربلند خان جوگیزئی،سینئر نائب صدر میر چنگیز جمالی،نائب صدر میر مولا بخش گورگیج،ڈپٹی جنرل سیکر حاجی ربانی خلجی،فنانس سیکرٹری ملک عبدالحمید کاکڑ رابطہ سیکرٹری سردار سرور سلیمانخیل ،،پاکستان تحریک انصاف سمیت دیگر نے کوئٹہ بم دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے اس میں قیمتی انسانی جانی نقصان پرافسوس کااظہار کرتے ہوئے جاںبحق وزخمی ہونے والوں کے اہل خانہ سے افسوس وہمدردی کااظہار کیاہے ،انہوں نے کہاکہ شہید افراد کے خاندانوں سے تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں،انہوں نے کہاکہ زخمیوں کی جلد صحت یابی کے لیے دعا گو ہیں،دھماکے میں ملوث عناصر کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔ اس طرح کے بزدلانہ کاروائیوں کے خلاف سیکورٹی اداروں کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ ترجمان حکومت بلوچستان لیاقت شاہوانی نے کہاکہ کوئٹہ کے میزان چوک کے قریب بم دھماکے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتاہوں ،دہشت گرد قانون کی گرفت سے نہیں بچ سکیںگے،تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ اور زخمیوں کی بہترین نگہداشت کے احکامات جاری کردئیے گئے ہیں ،ہم شہدا کے لواحقین کے دکھ میں شریک ہیں،دہشت گردوں کو کیفر کردار تک پہنچا کے دم لینگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں